"کبھی جالی کبھی گنبد کبھی مینار کے پاس ۔ ناظم بریلوی" کے اعادوں کے درمیان فرق

"نعت کائنات" سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش
(نیا صفحہ: {{بسم اللہ}} شاعر: ناظم بریلوی ==={{نعت}}=== کبھی جالی کبھی گنبد کبھی مینار کے پاس بیٹھ کر نعتیں لک...)
 
(No difference)

حالیہ نظرثانی بمطابق 07:07, 13 مارچ 2018


شاعر: ناظم بریلوی

نعتِ رسولِ آخر صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم[ترمیم]

کبھی جالی کبھی گنبد کبھی مینار کے پاس

بیٹھ کر نعتیں لکھوں روضۂ سرکار کے پاس


کہکشاں یا مہ و خورشید ہوں آتے ہیں سبھی

نور لینے کے لیے مرکزِ انوار کے پاس


با ادب حور و ملک جن و بشر شاہ و گدا

ہاتھ پھیلائے کھڑے ہیں درِ سرکار کے پاس


آپ سخیوں کے سخی آپ ہی نبیوں کے نبی

جائیں کیوں چھوڑ کے در آپ کا اغیار کے پاس


ناز کس پر کروں اک آپ کی نسبت کے سوا

اور کیا ہے مرے سرکار گنہ گار کے پاس


کل خزانوں کا انھیں رب نے بنایا مالک

کیا کمی ہے کوئی بتلائے تو سرکار کے پاس


اپنے دامن میں جسے آقا چھپا لیں ناظؔم

کیسے جائے گا وہ محشر میں بھلا نار کے پاس


پیشکش[ترمیم]

ابو المیزاب اویس

مزید دیکھیے[ترمیم]

نعت خوانی کے معروف کلام
نعت کائنات پر نئی شخصیات