سرکار کی یادوں کا دریچہ جو کھلا ہو ۔ صدیق اللہ ظفر

"نعت کائنات" سے
This is the approved revision of this page, as well as being the most recent.
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

"نعت کائنات " پر اپنے تعارفی صفحے ، شاعری، کتابیں اور رسالے آن لائن کروانے کے لیے رابطہ کریں ۔ سہیل شہزاد : 03327866659

شاعر: صدیق اللہ ظفر

نعتِ رسولِ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم[ترمیم]

سرکار کی یادوں کا دریچہ جو کھلا ہو

دل فرطِ مسّرت سے مرا غارِ حرا ہو


اک بار جو مل جائے مجھے اذنِ حضوری

چوکھٹ پر ہو سر سجدہ صد شکر ادا ہو


مجھ جیسے خطا کار کو محشر کا خطر کیا

جب سر پہ مرے آپ کی رحمت کی ردا ہو


گونج اٹھے زمانوں کی فضا نعتِ نبی سے

ہر سمت صدا صلِ علیٰ صلّ علیٰ ہو


قاتل بھی یہاں اپنے ہیں مقتول بھی اپنے

فرمائیں کرم سر کوئی تن سے نہ جدا ہو


آقا ہو سگِ در پہ بس اک نظرِ عنایت

بس ایک محبت کی نظر بہرِ خدا ہو


قدسی بھی نہ کیوں جھک کے سنیں نعتِ نبی جب

سرکار کے قدموں میں ظفر نعت سرا ہو