"جل رہا ہے محمد کی دہلیز پر، دل کو طاقِ حرم کی ضرورت نہیں . مظفر وارثی" کے اعادوں کے درمیان فرق

"نعت کائنات" سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش
(نیا صفحہ: {{بسم اللہ }} شاعر : مظفر وارثی کتاب : کعبہِ عشق === نعت ِ رسول ِ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ===...)
(10 intermediate revisions by 3 users not shown)
لکیر 1: لکیر 1:
 +
{{بسم اللہ }}
  
شاعر: [[مظفر وارثی ]]
+
شاعر : [[ مظفر وارثی ]]
 +
 
 +
کتاب : [[ کعبہِ عشق ]]
  
 
=== نعت ِ رسول ِ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ===
 
=== نعت ِ رسول ِ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ===
لکیر 15: لکیر 18:
  
  
حُسنِ خلاقِ کون و مکاں دیکھ لوں، جو نہ دیکھا کبھی وہ سماں دیکھ لوں
+
حُسنِ خلّاقِ کون و مکاں دیکھ لوں، جو نہ دیکھا کبھی وہ سماں دیکھ لوں
  
 
مجھ کو آئینہِ مُصطفٰے چاہیے پتّھروں کے صنم کی ضرورت نہیں
 
مجھ کو آئینہِ مُصطفٰے چاہیے پتّھروں کے صنم کی ضرورت نہیں
لکیر 41: لکیر 44:
  
 
=== مزید دیکھیں ===
 
=== مزید دیکھیں ===
 
 
[[مفلسِ زندگی اب نہ سمجھے کوئی ۔ مظفر وارثی]]
 
[[مفلسِ زندگی اب نہ سمجھے کوئی ۔ مظفر وارثی]]
  
=== پیشکش ===
+
[[ کرامت علی شہید ]] | [[احمد رضا خان بریویلوی]] | [[ محسن کاکوروی ]] | [[ مولانا حسن رضا خان ]] | [[ امیر مینائی ]] | [[ حفیظ تائب ]] | [[ حفیظ تائب ]] | [[ مظفر وارثی ]]
 
+
[[صارف: ابو المیزاب اویس | ابو المیزاب اویس]]
+
 
+
=== تازہ انتخاب ===
+
{{منتخب شاعری }}
+
 
+
[[زمرہ: ستمبر 2017 ]]
+

تـجدید بـمطابق 13:40, 17 ستمبر 2017

شاعر : مظفر وارثی

کتاب : کعبہِ عشق

نعت ِ رسول ِ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

جَل رہا ہے مُحمّد ﷺ کی دہلیز پر، دل کو طاقِ حرم کی ضرورت نہیں

میرے آقا کے مجھ پر ہیں اتنے کرم اب کسی کے کرم کی ضرورت نہیں


ہر طلوعِ سحر جن کے سائے تلے، جن کی آہٹ سے نبضِ دو عالم چلے

اُن کے قدموں سے لگ کر ہوں بیٹھا ہوا مجھ کو جاہ و حشم کی ضرورت نہیں


حُسنِ خلّاقِ کون و مکاں دیکھ لوں، جو نہ دیکھا کبھی وہ سماں دیکھ لوں

مجھ کو آئینہِ مُصطفٰے چاہیے پتّھروں کے صنم کی ضرورت نہیں


دُور سے آنے والی اس آواز پر، مَرمِٹوں جس میں ہو عشقِ خیرُالبَشر

سُوئے خیرُالبَشر جو نہ لے کے چلے، اس نشانِ قدم کی ضرورت نہیں


میری ہر سانس عشقِ نبی میں ڈھلے، یہ وہ سکّہ ہے عقبٰی میں بھی جو چلے

صرف دنیا میں جو خرچ کی جا سکے مجھ کو ایسی رقم کی ضرورت نہیں


کچھ نہ کرنی پڑےگی تلافی مجھے، مل ہی جائے گی حق سے مُعافی مجھے

عشقِ شاہِ پیمبر ہے کافی مجھے رختِ راہِ عدم کی ضرورت نہیں


کعب و حسّان کے ساتھ لائیں گے وہ، میری بخشش مُظؔفّر کرائیں گے وہ

میں حبیبِ خدا کا پرستار ہوں مجھ کو محشر کے غم کی ضرورت نہیں


مزید دیکھیں

مفلسِ زندگی اب نہ سمجھے کوئی ۔ مظفر وارثی

کرامت علی شہید | احمد رضا خان بریویلوی | محسن کاکوروی | مولانا حسن رضا خان | امیر مینائی | حفیظ تائب | حفیظ تائب | مظفر وارثی