سانچہ:نعت 2

"نعت کائنات" سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

نعت ِ رسول ِ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

آتے تھے یوں ملائکہ حضرت کے سامنے

جیسے فقیر صاب دولت کے سامنے


چاہیں جسے وہ دولت کونین بخش دے

یہ بات کیا ہے ان کی سخاوت کے سامنے


ہو سامنا اجل کا تو یثرب میں یا خدا

مرقد بنے تو شاہ کی تربت کے سامنے


اندھا کیا ہے شوق نے دریا ہو یا کنواں

کچھ سوجھتا نہیں ہے محبت کے سامنے


مشکل نہیں ہے ختکئی باراں ترا امیر

اس آفتاب مہر و مروت کے سامنے