خواب میں زلف کو مکھڑے سے ہٹالے آجا ۔ ویزدانی میرٹھی

"نعت کائنات" سے
This is the latest revision of this page; it has no approved revision.
نظرثانی بتاریخ 11:26, 20 جون 2017 از 39.55.22.243 (تبادلۂ خیال) (نیا صفحہ: {{بسم اللہ}} *شاعر: ویزدانی میرٹھی ==== نعت رسول اللہ صل اعلی علیہ و سلم ==== خواب میں زلف کو مکھڑے سے...)

(فرق) ←پرانی تدوین | حالیہ نظرثانی (فرق) | →اگلا اعادہ (فرق)
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

نعت رسول اللہ صل اعلی علیہ و سلم

خواب میں زلف کو مکھڑے سے ہٹالے آجا

بے نقاب آج تو اے گیسووں والے آج


بیکسی پر مری خوں روتے ہیں چھالے آجا

راہ میں چھوڑ گئے قافلے والے آجا


دم تری دید کو آنکھوں میں لگا رکھا ہے

لے رہے ہیں ترے بیمار سنبھالے آجا


ہوں سیہ کار مرے عیب کھلے جاتے ہیں

کملی والے مجھے بھی کملی میں چھپا لے آجا


صورت لالہ ہے پُرداغ کا بیاں کا سینہ

پڑ رہے ہیں ترے بیمار کے لالے آجا