میں کہ بے وقعت و بے مایا ہوں ۔احمد ندیم قاسمی

نعت کائنات سے
Jump to navigationJump to search
The printable version is no longer supported and may have rendering errors. Please update your browser bookmarks and please use the default browser print function instead.


شاعر: احمد ندیم قاسمی

نعتِ رسولِ آخر صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

میں کہ بے وقعت و بے مایہ ہوں

تیری محفل میں چلا آیا ہوں

آج ہوں میں ترا دہلیز نشیں

آج میں عرش کا ہم پایہ ہوں

چند پل یوں تری قربت میں کٹے

جیسے اِک عمر گزار آیا ہوں

جب بھی میں ارضِ مدینہ پہ چلا

دل ہی دل میں بہت اترایا ہوں

تیرا پیکر ہے کہ اک ہالہ نور

جالیوں سے تجھے دیکھ آیا ہوں

کتنی ٹھنڈی ہے ترے شہر کی دھوپ

خود کو اکسیر بنا لایا ہوں

یہ کہیں خامیء ایمان ہی نہ ہو

میں مدینے سے پلٹ آیا ہوں

مزید دیکھیے

نئے اضافہ شدہ کلام
نئے صفحات

اپنے ادارے کی نعتیہ سرگرمیاں، کتابوں کا تعارف اور دیگر خبریں بھیجنے کے لیے رابطہ کیجئے۔Email.png Phone.pngWhatsapp.jpg Facebook message.png

"نعت کائنات " پر اپنے تعارفی صفحے ، شاعری، کتابیں اور رسالے آن لائن کروانے کے لیے رابطہ کریں ۔ سہیل شہزاد : 03327866659