آنے والو یہ بتاو شہر مدینہ کیسا ہے ۔ عشرت گودھروی

"نعت کائنات" سے
This is the approved revision of this page, as well as being the most recent.
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

"نعت کائنات " پر اپنے تعارفی صفحے ، شاعری، کتابیں اور رسالے آن لائن کروانے کے لیے رابطہ کریں ۔ سہیل شہزاد : 03327866659

شاعر: عشرت گودھروی

نعتِ رسولِ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم[ترمیم]

آنے والو یہ بناوؔ شہرِ مدینہ کیسا ہے

سر انُ کے قدموں میں رکھ کر جھک کر جینا کیسا ہے


گنبدِ خضریٰ کے سائے میں بیٹھ کر تم تو آئے ہو

اس سائے میں رب کے آگے سجدہ کرنا کیسا ہے


دل آنکھیں اور روح تمہاری لگتی ہیں سیراب مجھے

ان کے در پہ بیٹھ کے آبِ زمزم پینا کیسا ہے


دیوانو! آنکھوں سے تمہاری اتنا پوچھ تو لینے دو

وقتِ دعا روضے پہ انُ کے آنسو بہانا کیسا ہے


اے جنت کے حقدارو، مجھ منگتے کو یہ بتلاوؔ

انُ کی سخا سے دامن کو بھر کر آنا کیسا ہے


لگ جاوؔ سینے سے میرے طیبہ سے تم آئے ہو

یہ بتلاوؔ عشرت ان کے گھر سے بچھڑنا کیسا ہے

کلام میں نعت خوانوں کی پذیرائی[ترمیم]

| عبدالرؤف روفی کی آواز میں

| قاری خورشید احمد کی آواز میں

| حافظ احمد رضا قادری کی آواز میں

| مفتی کوثر روحانی کی آواز میں


نعت کائنات پر نئے صفحات
اس ماہ کی اہم شخصیات

مزید دیکھیے[ترمیم]

"نعت کائنات " پر اپنے تعارفی صفحے ، شاعری، کتابیں اور رسالے آن لائن کروانے کے لیے رابطہ کریں ۔ سہیل شہزاد : 03327866659
"نعت کائنات"پر موقر ادبی جریدوں کو آن لائن کیا جا رہا ہے ۔اپنے رسالے / جریدے کو آن لائن کرنے کے لیے رابطہ کیجئے ۔ دبستان نعت ۔ انڈیا کا تازہ شمارہ آن لائن پڑھیے ۔
"نعت کائنات : اس طرح کے بے شمار اہم صفحات کا زخیرہ ہے ۔ اگر آپ حمد و نعت کے حوالے سے کوئی سرگرمی کر رہے ہیں تو ہمیں ضرور مطلع کریں ۔ مزید اہم صفحات دیکھیے
اس ہفتے زیادہ پڑھے جانے والے کلام