یہ کیفیت جو مری بے خودی کی ہے ۔ سوزڈیروی

"نعت کائنات" سے
This is the approved revision of this page, as well as being the most recent.
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

شاعر: سوزڈیروی

نعتِ رسولِ آخر صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم[ترمیم]

یہ کیفیت جو مری بے خودی کی ہے [1]

اک انبساط ثنائے محمدی کی ہے


مرے رسول کا احساں ہے ساری دنیا پر

مرے رسول نے دنیا کی رہبری کی ہے


کسی کے دل میں مقامِ رسول کتنا ہے

یہ بات تو ادراک وآگہی کی ہے


وفا بھی آپ کی معراج پر ہے پیارے رسول

کہ راہِ حق میں ہر اک طرح کی سعی کی ہے


کروں گا کیا بھلا دنیا کو لے کے میں آقا

مجھے تو آرزو بس آپ کی گلی کی ہے


رسولِ پاک کی الفت کا جام پینے دے

نمو اسی سے تو زاہد یہ زندگی کی ہے


یوں احترامِ صحابہ بھی ہم پہ لازم ہے

مرے نبی سے صحابہ نے دوستی کی ہے


بروزِ حشر شفاعت نصیب ہوگی سوز

برائے مدحتِ آقا سخنوری کی ہے

حواشی و حوالہ جات[ترمیم]

  1. ڈاکڑ شہزاد احمد، ایک سو ایک پاکستانی نعت گو شعرا، رنگ ادب پبلی کیشنز، کراچی ۔ 2017