ہم نے یوں احوال جاں،پیش شہ اکرم کہا ۔ قمر حیدر قمر

"نعت کائنات" سے
This is the approved revision of this page, as well as being the most recent.
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

"نعت کائنات " پر اپنے تعارفی صفحے ، شاعری، کتابیں اور رسالے آن لائن کروانے کے لیے رابطہ کریں ۔ سہیل شہزاد : 03327866659

شاعر: قمر حیدر قمر

برائے : نعت رنگ ۔ شمارہ نمبر 26

نعتِ رسولِ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم[ترمیم]

ہم نے یوں احوالِ جاں،پیشِ شہِ اکرم کہا

آنسوؤں سے نعت لکھی،سسکیوں سے غم کہا


تمتائے رُخ پہ اشکوں کی لکیریں نقش تھیں

ہم نے شعلے کی زبانی قصۂ شبنم کہا


عقل کہتی ہے کہ تم نے ان سے باتیں کیں بہت

عشق کہتا ہے کہ’’جو کچھ بھی کہا،وہ کم کہا‘‘


کس بلیغ انداز میں ساری دعائیں مانگ لیں

دل نے بس اک بار رو کر ’’رحمتِ عالم‘‘کہا


آنکھ کی تختی پہ وہ تو یاد کی تحریر تھی

دیکھنے والوں نے جس کو آنسوؤں کا غم کہا


سارا پتھر پن سفر کا نرمیوں میں ڈھل گی

ا ان کی باتوں کو دہانِ زخم نے مرہم کہا


مزید دیکھیے[ترمیم]

زیادہ پڑھے جانے والے کلام