ہجا

"نعت کائنات" سے
This is the approved revision of this page, as well as being the most recent.
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

Arooz.jpg

"نعت کائنات " پر اپنے تعارفی صفحے ، شاعری، کتابیں اور رسالے آن لائن کروانے کے لیے رابطہ کریں ۔ سہیل شہزاد : 03327866659

ہجا[ترمیم]

"ہجا" سادہ الفاظ میں کسی لفظ میں موجود کسی آواز کو کسی علامت سے ظاہر کرنے کو "ہجا " کہتے ہیں ۔حروف ِ تہجی بھی دراصل علامتیں ہی ہیں ۔ مثلا جب لفظ "سادہ" بولتے ہیں تو پہلی آواز کو "سا" اور دوسری آواز کو "دہ" سے ظاہر کرتے ہیں اور مکمل لفظ "سادہ" ادا ہوتا ہے ۔ ہجا دو طرح کا ہوتا ہے

ایک حرفی اور دو حرفی

چھوٹا ہجا[ترمیم]

چھوٹا ہجا ۔ یعنی چھوٹی آواز ۔ ایک حرفی ہجا کو ہجائے کوتاہ یا چھوٹا ہجا کہتے ہیں

یہ ایک حرفی "ہجا" لفظ کے شروع میں بھی آسکتا ہے ، درمیان بھی اور آخر میں بھی ۔ جیسے لفظ اسلام میں "م"لفظ مستقل میں "ت" اور لفظ "قمر " میں ق ۔ یہ حرف ساکن بھی ہو سکتا ہے اور متحرک بھی ۔ اسلام کی "م" ساکن ہے اور مستقل کی ت اور قمر کا ق متحرک ۔ یہاں یاد رکھنے کی بات یہ ہے کہ اردو کا کوئی بھی لفظ "ساکن" حرف سے شروع نہیں ہوتا۔

چھوٹے ہجا کو کو عروض کے "عددی نظام" میں 1 اور علامتی نظام " ۔" سے ظاہر کیا جاتا ہے ۔

بڑا ہجا[ترمیم]

بڑا ہجا ۔ یعنی بڑی آواز ۔ دو حرفی ہجا کو بڑا ہجا کہتے ہیں

جیسے لفظ اسلام میں اس اور لا

ایک بار میں اگر دو حروف پڑھے جائیں تو اسے بڑا ہجا کہتے ہیں ۔ یاد رہے کہ کسی بھی لفط میں جب ایک متحرک [ ایسا حرف جس پر زیر ، زبر یا پیش ہو ] حرف کسی دوسرے ساکن حرف [ جس حرف پر زیر زبر پیش نہ ہو ملتا ہے تو بڑا ہجا بنتا ہے ۔

جیسے (الف سین) زیر اس یا (لام الف) زبر لا

بڑے ہجے کو "عروض کے "عددی نظام " میں "2 " اور علامتی نظام میں "=" سے ظاہر کیا جاتا ہے ۔

اس طرح عددی نظام میں کے مطابق لفظ "اسلام" کو 122 سے اور "علامتی نظام" میں "= = - " سے ظاہر کیا جاتا ہے ۔

شراکت[ترمیم]

ظفر قادری

مزید دیکھیے[ترمیم]

وزن | ہجا | افاعیل | زحافات | بحر | تقطیع


نئے صفحات
اپنے تازہ کلام اس نمبر پر وٹس ایپ کریں 00923214435273

اپنے ادارے کی نعتیہ سرگرمیاں، کتابوں کا تعارف اور دیگر خبریں بھیجنے کے لیے رابطہ کیجئے۔Email.png Phone.pngWhatsapp.jpg Facebook message.png

‘‘http://naatkainaat.org/index.php?title=ہجا&oldid=22105’’ مستعادہ منجانب