کسی اور کے خدا سے نہ غرض نہ واسطہ ہے ۔ اعجاز رحمانی

"نعت کائنات" سے
This is the approved revision of this page, as well as being the most recent.
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

شاعر: اعجاز رحمانی

نعتِ رسولِ آخر الزماں صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم[ترمیم]

کسی اور کے خدا سے نہ غرض نہ واسطہ ہے

ہے وہی خدا ہمارا جو حضور کا خدا ہے


یہ جو بزمِ آب وگِل ہے یہ تمام کربلا ہے

جہاں امن وآشتی ہے وہ دیارِ مصطفیٰ ہے


یہ جو آدمی کا رتبہ ہے بلند قدسیوں سے

کسی اور کا نہیں ہے یہ کرم حضور کا ہے


مہ و آفتاب کیا ہیں تری گردِ رہگور ہیں

وہی راستہ ہے روشن جہاں تیرا نقش پا ہے


جسے مصطفیٰ نے روشن کی ظلمتِ حرا میں

سرِ بزمِ علم ودانش وہ چراغ جل رہا ہے


کوئی اس کی عظمتوں کو نہ سراغ پا سکے گا

وہ نعال پا ہے اس کی جسے عرش چومتا ہے


کسی اور راستے سے نہ ملے گی ہم کو منزل

جو حضور نے بتایا وہی ٹھیک راستہ ہے


مری بات کی گواہی ہے اذان اور کلمہ

جہاں ذکر ہے خدا کا وہیں ذکرِ مصطفیٰ ہے


مجھے ناز بخت پر ہے مجھے فخر ہے یہ اعجاز

کہ مرا نبی وہی ہے جو امام الانبیاء ہے