نازاں تو ہوں میں مدحتِ سرکار کے سبب ۔ ذوالفقار علی دانش

"نعت کائنات" سے
This is the approved revision of this page, as well as being the most recent.
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

"نعت کائنات " پر اپنے تعارفی صفحے ، شاعری، کتابیں اور رسالے آن لائن کروانے کے لیے رابطہ کریں ۔ سہیل شہزاد : 03327866659

شاعر: ذوالفقار علی دانش

نعت ِ رسول ِ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم[ترمیم]

نازاں تو ہوں میں مدحتِ سرکار کے سبب

نادم بھی پر ہوں نفسِ خطاکار کے سبب


تحقیق ! بالیقین رضائے خدائے پاک

ملتی ہے حُبِّ احمدِ مختار کے سبب


لکھنا ہمارا نعتِ نبی رائیگاں نہیں

ہم ہونگے سرخرو انھی اشعار کے سبب


محشر میں بخشے جائیں گے ، اتنا یقین ہے

ہم بھی شفاعتِ شہِ ابرار کے سبب


کیجے کرم غلام پہ لللہ اب حضور !

بے کل ہوں کب سے حسرتِ دیدار کے سبب


معراج رات گردشِ دوراں ٹھہر گئی

رب سے لقائے سیّدِ ابرار کے سبب


کارِ ثنائے خواجہ ءِ بطحا نہیں عبث

سب کچھ ہمیں ملا ہے اسی کار کے سبب


چشمِ کرم حضور ! کہ امت یہ آپ کی

غرقِ ستم ہے سازشِ اغیار کے سبب


خلقت زبانِ حال سے کہتی ہے اے خدا !

ہم پر کرم ہو سیدِ ابرار کے سبب


روشن ہیں جس کے نور سے مہر و مہ و نجوم

ہم بھی ہیں اس نگاہِ ضیا بار کے سبب


نعتِ نبی کی جب مجھے توفیق مل گئی

دل جگمگایا بارشِ انوار کے سبب


پہچان مل گئی ہے ہمیں ایک منفرد

اہلِ سخن میں نعتیہ اشعار کے سبب


دانش کو جانتا ہی بھلا کون تھا یہاں ؟

ہے نام اس کا مدحتِ سرکار کے سبب


مزید دیکھیے[ترمیم]

پچھلا کلام | اگلا کلام | ذوالفقار علی دانش کی حمدیہ و نعتیہ شاعری | | ذوالفقار علی دانش