مصیبت میں پڑے ہیں ، اَنْتَ مَوْلٰنَا ۔ ذوالفقار علی دانش

"نعت کائنات" سے
This is the approved revision of this page; it is not the most recent. View the most recent revision.
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

"نعت کائنات " پر اپنے تعارفی صفحے ، شاعری، کتابیں اور رسالے آن لائن کروانے کے لیے رابطہ کریں ۔ سہیل شہزاد : 03327866659

شاعر: ذوالفقار علی دانش

حمدِ باری تعالی جل جلالہ

مصیبت میں پڑے ہیں ، اَنْتَ مَوْلٰنَا

ترے در پر کھڑے ہیں ، اَنْتَ مَوْلٰنَا


ہمارے حق میں یہ نعمت ہی کافی ہے

کہ ہم بندے ترے ہیں ، اَنْتَ مَوْلٰنَا


مدد فرما ، مدد فرما ، مدد فرما

مصیبت میں گھرے ہیں ، اَنْتَ مَوْلٰنَا


وسیلہ پیارے پیغمبر کا لائے ہیں

لئے کاسہ کھڑے ہیں ، اَنْتَ مَوْلٰنَا


ترے در کے سوا یا رب! کہاں جائیں

گدا ہم سب ترے ہیں ، اَنْتَ مَوْلٰنَا


تجھی سے ہم ، تجھی سے مانگتے ہیں ہم

ترے ہیں ہم ترے ہیں ، اَنْتَ مَوْلٰنَا


کرم عادت ہے تیری ، ہم ترے بندے

خطا سے ہم بھرے ہیں ، اَنْتَ مَوْلٰنَا

مزید دیکھیے

پچھلا کلام | فہرست | اگلا کلام | | ذوالفقار علی دانش