شرط ، الفت ہے ، عدیم ! آقا کی پائے خوشبو . عباس عدیم قریشی

"نعت کائنات" سے
This is the approved revision of this page, as well as being the most recent.
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

شاعر : عباس عدیم قریشی

نعتِ رسولِ آخر صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم[ترمیم]

شرط ، الفت ہے ، عدیم ! آقا کی پائے خوشبو

ان کا ہو دیکھ ، تری سانس سے آئے خوشبو


سارا ماحول تصور سے مہک جاتا ہے

مجھ کو کافی ہے ترا نام برائے خوشبو


میں چھپاتا ہوں چھلکتی ہے یہ آنسو بن کر

عشق احمد کی کوئی کیسے چھپائے خوشبو


روح ِ گلشن ، مرے آقا کا پسینہ ہے عدیم

بوئے احمد سے بنے عطر ، ’’سرائے خوشبو‘‘

مزید دیکھیے[ترمیم]

زیادہ پڑھے جانے والے کلام