سمتِ کاشی سے چلا جانبِ متھرا بادل ۔ محسن کاکوروی

"نعت کائنات" سے
This is the approved revision of this page, as well as being the most recent.
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

شاعر: محسن کاکوروی

قصیدہ لامیہ سے چند اشعار

نعتِ رسولِ آخر صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم[ترمیم]

سمتِ کاشی سے چلا جانبِ متھرا بادل

برق کے کاندھے پہ لاتی ہے صبا گنگا جل


گلِ خوش رنگ رسولِ مدنی و عربی

زیبِ دامانِ ادب، طرہِ دستار ازل


نہ کوئی اس کا مشابہ ہے ہمسر نہ نظیر

نہ کوئی اس کا مماثل نہ مقابل نہ بدل


اوجِ رفعت کا قمر، نخلِ دو عالم کا ثمر

بحرِ وحدت کا گُہر، چشمہؔ کثرت کا کنول


مہرِ توحید کی ضُو، اوج شرف کا مہ نو

شمعِ ایجاد کی لُو، بزم رِسالت کا کنول


مرجع روح امیں، زیب دہِ عرشِ بریں

حامی دینِ متیں، ناسخ ادیان و مِلل


ہفت اقلیم ولایت میں شہِ عالی جاہ

چار اطرافِ ہدایت میں نبی مُرسل