ستارہ بن کے رہوں بے کنار ہو جاؤں ۔ جاذب قریشی

"نعت کائنات" سے
This is the approved revision of this page, as well as being the most recent.
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

Jazib qureshi.jpg

"نعت کائنات " پر اپنے تعارفی صفحے ، شاعری، کتابیں اور رسالے آن لائن کروانے کے لیے رابطہ کریں ۔ سہیل شہزاد : 03327866659

شاعر: جاذب قریشی

نعتِ رسولِ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم[ترمیم]

ستارہ بن کے رہوں بے کنار ہو جاؤں

جو تو ملے تو اندھیروں کے پار ہو جاؤں


تبسموں کے اجالے شفاعتوں کے حرم

مجھے بُلا کہ میں تجھ پر نثار ہو جاؤں


بدن کا نور بھی تو ذات کا شعور بھی تو

تجھے نہ یاد کروں تو غبار ہو جاؤں


وہ انقلاب جسے تیری زندگی نے لکھا

میں پٰڑھ سکوں تو گلِ نو بہار ہو جاؤں


میں ایسی خاک کہ خوشبو کی پیاس ہے مجھ کو

خڈا کرے میں تری رہ گزار ہو جاؤں


میں اپنے عہد کا صحرا ہوں مجھ کو حسرت ہے

ترے حضور گروں آبشار ہو جاؤں


وہ ایک عکس مری دھڑکنوں میں اترے تو

میں اپنے آپ میں خود بے شمار ہو جاؤں


ترے طلب میں چلوں اور خود کو گم کردوں

میں چاہتا ہوں کہ بے اختیار ہو جاؤں


مری طلب کے مصوّر مجھے وہ صورت دے

کہ دھوپ میں شجرِ سایہ دار ہو جاؤں


مزید دیکھیے[ترمیم]

نئے اضافہ شدہ کلام


نئے صفحات
"نعت کائنات " پر اپنے تعارفی صفحے ، شاعری، کتابیں اور رسالے آن لائن کروانے کے لیے رابطہ کریں ۔ سہیل شہزاد : 03327866659
"نعت کائنات"پر موقر ادبی جریدوں کو آن لائن کیا جا رہا ہے ۔اپنے رسالے / جریدے کو آن لائن کرنے کے لیے رابطہ کیجئے ۔ دبستان نعت ۔ انڈیا کا تازہ شمارہ آن لائن پڑھیے ۔