زمرہ:2017 کی نعت

"نعت کائنات" سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش


ان کیٹگرائزڈ[ترمیم]

مداحی رسول رسولاں کے عطر سے[ترمیم]

مَدّاحی رَسُولؐ رَسُولاںؑ کے عِطّر سے

مہکا ہوا اِحاطہ ہے دارُالسّلام کا


سرکارؐ کی وِداد کا ہے محور ومآل

واللہ! صَدر آدمی وگُرگ ودام کا


عالم کے واسطے ہے ولائے رَسُولؐ سِرّ

آگاہی وعُلُوم کی عُمرِ دوام کا


اَطہر ورودِ مالِکِؐ لولاک سے ملا

ہر مرد وکس کو درس حلال وحرام کا


درد و سَلاسِلِ اَلَمِ رُوح کاہ کا

درماں ہے اِسمِ سعد رُسُلؑ کے اِمامؐ کا


لوٹا درِ رَسُولؐ سے معمورِ مُدّعا

کاسہ مُساوی اہلِ کُلاہ وعوام کا


ہم دم! ہے سلسلہ گروِ حُکُمِ احمدیؐ

دَلو مہ و اَسَد کے مدارِ مُدام کا


ہے عکس لا مَحالہ ہر اِک وَحیِ کردگار

محمودِؐ کردگار کے کلمہ کلام کا


راہ وصِراط سائد عالم کی رہ روی

در دہر گر ہے وَصل وحصولِ مرام کا


اوبام وصاد ومَردمِ عالم سے ہے ورا

اِکرام کا کمال، کئے کل کرام کا


ہوں راہوار وراحلہ مدح کا سوار

دل سے محال ارادہ ہے دادِ لگام کا


کِلک ومدادِ مہر محمدؐ سے لکھا ہے

رائے! ہر اِک کلام مرصع کلام کا

نعتِ رسولِ آخر صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم[ترمیم]

خود کو جو حق کی محبت میں مٹا دیتا ہے

اس کے ہاتھوں میں خدا ارض وسما دیتا ہے


شرک کی آگ جو سینے سے بجھا دیتا ہے

اس کا دل ظلمتِ شب میں بھی ضیا دیتا ہے


میں کہ اس خالقِ کونین کے در کا ہوں فقیر

جو فقیروں کو شہنشاہ بنا دیتا ہے


اس کی اس نعمتِ عظمیٰ کو بیاں کیسے کروں

سانس لینے کو جو ہر وقت ہوا دیتا ہے


جو بھی سہتا ہے علامت کو شکیبائی سے

ایسے بیما کو اللہ شفا دیتا ہے


یہ تو ہم کہ جو جاتے ہی نہیں اس کے قریب

وہ تو ہر وقت ہی بخشش کی صدا دیتا ہے


جو بھی ہو جاتا ہے اس ذات کا، اللہ اسے

اپنے دیدار کی صورت میں صلہ دیتا ہے


شکر میں اس کا تفاخر نہ کروں کیسے ادا

مجھ کو عزّت جو محافل جدا دیتا ہے

کیٹگری 1[ترمیم]

شاہد کوثری، اسلام آباد[ترمیم]

منم برگِ خزاں دیدہ و تُو ابرِ بہار من

کہ در آشوبِ عصیاں، تُو گلستانِ قرارِ من


بفیضِ نعت در دل کثرتِ روئیدگی بینم

ہزاراں گل دمیدہ از کرم بر شاخسارِ من


نگاہِ لطف بکشا ، رحم کن بر حالِ مسکینم

مَنم دل ریش و خستہ تن، کرم اے غمگسارِ من


بشو از لطف و رحمت ، اے طبیبِ جملہ علّت ہا

تنم آلودہ ءِ عصیاں، ہمہ دل داغدارِ من


شکستہ پا شدم ، آثارِ منزل را نمی بینم

بیا من رہ گزیدہ ام ، مدد اے شہسوارِ من


مکن محروم ازشانِ کریمی ، داورِ محشر!

مَنم یک بندہ ءِ بے چارہ ام ، پروردگارِ من


بہ درگاہِ تو ، شاہد کوثری ایں التجا دارد

بہ پیشِ مصطفےٰ رسوا مکن ، اے کردگارِ من !

کیٹگری 2[ترمیم]

کیٹگری 3[ترمیم]

‘‘اِس زمرہ میں ابھی کوئی صفحات یا وسیط موجود نہیں.’’