جس طرف چشم محمدﷺ کے اشارے ہو گئے ۔ ساغر صدیقی

"نعت کائنات" سے
This is the approved revision of this page, as well as being the most recent.
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

"نعت کائنات " پر اپنے تعارفی صفحے ، شاعری، کتابیں اور رسالے آن لائن کروانے کے لیے رابطہ کریں ۔ سہیل شہزاد : 03327866659

شاعر : ساغر صدیقی

نعت رسول اللہ صل اعلی علیہ و سلم[ترمیم]

جس طرف چشم محمدﷺ کے اشارے ہو گئے

جتنے ذرے سامنے آئے ستارے ہو گئے


جب کبھی عشق محمدﷺ کی عنایت ہو گئی

میرے آنسو کوثر و زمزم کے دھارے ہو گئے


موجہ طوفاں میں جب نام محمدﷺ لے لیا

ڈوبتی کشتی کے تنکے ہی سہارے ہو گئے


یا محمدﷺ آپ کی نظروں کا یہ اعجاز ہے

جس طرف نظریں اٹھیں سب تمہارے ہو گئے


میں ہوں اور یاد مدینہ اور ہیں تنہائیاں

پنے بیگانے سبھی مجھ سے کنارے ہو گئے


اپنی کملی کا ذرا سایہ عنایت ہو مجھے

دل کے دشمن یا محمدﷺ دل سے پیارے ہو گئے


مزید دیکھیے[ترمیم]

زیادہ پڑھے جانے والے کلام