اے خاصہ خاصانِ رسل ،ہادی برحق ۔ ستیا پال آنند

"نعت کائنات" سے
This is the approved revision of this page, as well as being the most recent.
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

شاعر: ستیا پال آنند

نعت رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم[ترمیم]

اے خاصہ خاصانِ رسل ،ہادی برحق

حالی نے روا رکھا تھا جو طرزِ تخاطب

مجھ جیسے سبک سرکو تو اچھا نہیں لگتا

اے سید الابرار۔۔۔

’’امّت پہ تری آکے عجب وقت پڑا ہے ‘‘ ۱

اس’’تُم ‘‘پہ،’’تمہاری ‘‘پہ، تِری ’’،تُو‘‘ پہ،تومالک

ہے سخت تعجب کہ اک ادنےٰ سایہ انسان

کیاآپ سے اس درجہ تکلّف سے بری ہے ؟

اے سرور کونین۔۔۔

میں خاکِ کفِ پابھی نہیں آپ کی آقا

میں کیا ہوں ،فقط اک کفِ خاشاک، خس وخاک

بے وقعت وناکارہ وبے دانِش ونافہم

اورآپ ،حضور ،اکمل وسرمد،مرے مالک

میں آپ کو’’تُو‘‘ کہہ کے پکاروں ؟ مری جرأت؟

میں ’’تُو‘‘ کہوں اس صلِّ علیٰ ،شمس الضحےٰ کو

جس کے لیے حسّانؓ ۲ کالہجہ بھی ہے کمتر؟

اس طرزِ تخاطب پہ زباں میری نہ کٹ جائے؟

اے صدر العلیٰ شہ ۔۔۔

(ہاں،خاک مرے منہ

میں) مگر پوچھ ہی لوں میں

کیاآپ شہ انبیا،کمتر ہیں کسی سے؟

جوآپ کو’’تُو‘‘کہہ کے مخاطب ہیں سخن میں

یہ ’’افسر الشعرا‘‘،یہ ’’غزل گو‘‘ ،یہ ’’بیت بند‘‘؟

اے سیّد الابرار۔۔۔

۱۔خواجہ الطاف حسین حالی

۲۔حضرت حسّان بن ثابت

شہ انبیا کی خدمت اقدس میں اس حقیر شاعر ستیہ پال آنند نے یہ استغاثہ پیش کیا


رسائل و جرائد جن میں یہ کلام شائع ہوا[ترمیم]

نعت رنگ ۔شمارہ نمبر 25