اللہ نے یہ شان بڑھائی ترے در کے ۔ منور بدایونی

"نعت کائنات" سے
This is the approved revision of this page, as well as being the most recent.
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

شاعر : منور بدایونی

نعتِ رسولِ آخر الزماں صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم[ترمیم]

اللہ نے یہ شان بڑھائی ترے در کے

بخشی ہے ملائک کو گدائی ترے در کے


پانے کو تو خورشید و قمر چرخ نے پائے

کیا پایا اگر خاک نہ پائی ترے در کے


جنت نے اتارے تو بہت نور کے نقشے

تصویر مگر ہاتھ نہ آئی ترے در کے


حوروں نے، ملائک نے، اجنا نے، بشر نے

کس کس نے کہاں بھیک نہ پائی ترے در کے


اللہ کے گھر سے ہے رسائی ترے در تک

اللہ کے گھر تک ہے رسائی ترے در کے


لے جائے گی اک دن مجھے طیبہ میں اڑا کر

جس وقت ہوا جھوم کر آئی ترے در کے


محشر میں بھی اس شان سے جاوں گا منور

رکھے ہوئے کاندھے پہ چٹائی ترے در کے


نعت خوانوں میں کلام کی پذیرائی[ترمیم]

| قاری وحید ظفر کی آواز میں

مزید دیکھیے[ترمیم]

جسے چاہا در پہ بلا لیا ، جسے چاہا اپنا بنا لیا | صبح میلادالنبی ہے کیا سہانا نور ہے | نعت محبوبِ داور سند ہو گئی | اللہ نے یہ شان بڑھائی ترے در کے | سر میدان ِ محشر جب مری فرد عمل نکلی


تھی جس کے مقدر میں گدائی تیرے در کی ۔ نصیر الدین نصیر